وزارت خزانہ19-June, 2017 11:15 IST
سی بی ڈی ٹی نے ثانوی ایڈجسٹمنٹ کیلئے ضابطہ 10سی بی کا نوٹیفکیشن جاری کیا

نئی دہلی۔19؍جون۔براہِ راست ٹیکسوں کے مرکزی بورڈ نے 15 جون 2017 کو ثانوی تطبیق کی شقوں پر عمل درآمد کیلئے 10 سی بی ضابطے کے لئے نوٹیفکیشن جاری کیا۔ اس میں فاضل رقم کی واپسی کے لئے مقررہ مدت بتائی گئی ہے اورفاضل رقم کی واپسی میں ناکام رہنے کی صورت میں فاضل رقم کی مقررہ وقت میں وصولی کیلئے وہ شرح سود بھی بتائی گئی ہے جو آمدنی کے مطابق لاگو ہوگی۔ اُس بین الاقوامی لین دین کیلئے سود کی علیحدہ شرحیں بھی فراہم کرائی گئی ہیں جن کا بھارتی کرنسی اور غیرملکی کرنسی میں غلبہ ہے۔ سود کی یہ شرحیں سالانہ بنیادوں پر لاگو ہوں گی۔

 

اس صورت میں جبکہ بنیادی تطبیق جائزہ سال 18-2017 یا اس کے بعد کے سالوں کیلئے ہو اور یہ جائزہ حتمی شکل میں پیش کیا جارہا ہو تو فاضل رقم کی واپسی کی 90 دن کی معینہ مدت اسی لحاظ سے شما رکی جائے گی جہاں ٹیکس دہندہ  کی طرف سے اس کے خلاف اپیل کی گئی ہووہاں اپیل اتھاریٹی کی طرف سے اپیل پر کوئی فیصلہ دیے جانے کے بعد ہی رقم واپسی کی یہ مدت شروع ہوگی۔

 

یہ ضابطہ انکم ٹیکس  محکمے کی ویب سائٹ(www.incometaxindia.gov.in)  پر دستیاب ہے۔

 

مالی قانون 2017 کے تحت انکم ٹیکس قانون 1961 میں یکم اپریل 2018 سے دفعہ 92 سی ای شامل کی گئی ہےجس کا مقصد معاون صنعتوں کے  ہاتھوں میں پڑی ہوئی فاضل رقم سے آئی ہوئی آمدنی کے ذریعے ثانوی تطبیق فراہم کرنا ہے تاکہ ان رقوم کی اصل الاٹمنٹ کی جاسکے جن میں ابتدائی ٹرانسفر پرائسنگ تطبیق شامل ہو ، اس شق کا اطلاق اس ابتدائی تطبیق پر ہوگا جس کی رقم جائزہ سال 18-2017 اور اس کے بعد کے لحاظ سے ایک کروڑ روپئے سے تجاویز کررہی ہو۔

 

 

 

م ن۔ ا س۔ ع ن

U-2805

(Release ID :165738)

home  Printer friendly Page